Al-Infitar( الإنفطار)
Original,King Fahad Quran Complex(الأصلي,مجمع الملك فهد القرآن)
show/hide
Tahir ul Qadri(طاہر القادری)
show/hide
بِسمِ اللَّهِ الرَّحمٰنِ الرَّحيمِ إِذَا السَّماءُ انفَطَرَت(1)
جب (سب) آسمانی کرّے پھٹ جائیں گے،(1)
وَإِذَا الكَواكِبُ انتَثَرَت(2)
اور جب سیارے گر کر بکھر جائیں گے،(2)
وَإِذَا البِحارُ فُجِّرَت(3)
اور جب سمندر (اور دریا) ابھر کر بہہ جائیں گے،(3)
وَإِذَا القُبورُ بُعثِرَت(4)
اور جب قبریں زیر و زبر کر دی جائیں گی،(4)
عَلِمَت نَفسٌ ما قَدَّمَت وَأَخَّرَت(5)
تو ہر شخص جان لے گا کہ کیا عمل اس نے آگے بھیجا اور (کیا) پیچھے چھوڑ آیا تھا،(5)
يٰأَيُّهَا الإِنسٰنُ ما غَرَّكَ بِرَبِّكَ الكَريمِ(6)
اے انسان! تجھے کس چیز نے اپنے ربِ کریم کے بارے میں دھوکے میں ڈال دیا،(6)
الَّذى خَلَقَكَ فَسَوّىٰكَ فَعَدَلَكَ(7)
جس نے (رحم مادر کے اندر ایک نطفہ میں سے) تجھے پیدا کیا، پھر اس نے تجھے (اعضا سازی کے لئے ابتداءً) درست اور سیدھا کیا، پھر وہ تیری ساخت میں متناسب تبدیلی لایا،(7)
فى أَىِّ صورَةٍ ما شاءَ رَكَّبَكَ(8)
جس صورت میں بھی چاہا اس نے تجھے ترکیب دے دیا،(8)
كَلّا بَل تُكَذِّبونَ بِالدّينِ(9)
حقیقت تو یہ ہے (اور) تم اِس کے برعکس روزِ جزا کو جھٹلاتے ہو،(9)
وَإِنَّ عَلَيكُم لَحٰفِظينَ(10)
حالانکہ تم پر نگہبان فرشتے مقرر ہیں،(10)
كِرامًا كٰتِبينَ(11)
(جو) بہت معزز ہیں (تمہارے اعمال نامے) لکھنے والے ہیں،(11)
يَعلَمونَ ما تَفعَلونَ(12)
وہ ان (تمام کاموں) کو جانتے ہیں جو تم کرتے ہو،(12)
إِنَّ الأَبرارَ لَفى نَعيمٍ(13)
بیشک نیکوکار جنّتِ نعمت میں ہوں گے،(13)
وَإِنَّ الفُجّارَ لَفى جَحيمٍ(14)
اور بیشک بدکار دوزخِ (سوزاں) میں ہوں گے،(14)
يَصلَونَها يَومَ الدّينِ(15)
وہ اس میں قیامت کے روز داخل ہوں گے،(15)
وَما هُم عَنها بِغائِبينَ(16)
اور وہ اس (دوزخ) سے (کبھی بھی) غائب نہ ہو سکیں گے،(16)
وَما أَدرىٰكَ ما يَومُ الدّينِ(17)
اور آپ نے کیا سمجھا کہ روزِ جزا کیا ہے،(17)
ثُمَّ ما أَدرىٰكَ ما يَومُ الدّينِ(18)
پھر آپ نے کیا جانا کہ روزِ جزا کیا ہے،(18)
يَومَ لا تَملِكُ نَفسٌ لِنَفسٍ شَيـًٔا ۖ وَالأَمرُ يَومَئِذٍ لِلَّهِ(19)
(یہ) وہ دن ہے جب کوئی شخص کسی کے لئے کسی چیز کا مالک نہ ہوگا، اور حکم فرمائی اس دن اللہ ہی کی ہوگی،(19)