Al-Infitar( الإنفطار)
Original,King Fahad Quran Complex(الأصلي,مجمع الملك فهد القرآن)
show/hide
Tafseer e Makki(تفسیر مکی)
show/hide
بِسمِ اللَّهِ الرَّحمٰنِ الرَّحيمِ إِذَا السَّماءُ انفَطَرَت(1)
١۔١ یعنی اللہ کے حکم اور اس کی ہیبت سے پھٹ جائے گا اور فرشتے نیچے اتر آئیں گے۔(1)
وَإِذَا الكَواكِبُ انتَثَرَت(2)
(2)
وَإِذَا البِحارُ فُجِّرَت(3)
(3)
وَإِذَا القُبورُ بُعثِرَت(4)
٤۔١ یعنی قبروں سے مردے زندہ ہو کر نکل آئیں گے یا ان کی مٹی پلٹ دی جائے گی۔(4)
عَلِمَت نَفسٌ ما قَدَّمَت وَأَخَّرَت(5)
(5)
يٰأَيُّهَا الإِنسٰنُ ما غَرَّكَ بِرَبِّكَ الكَريمِ(6)
(6)
الَّذى خَلَقَكَ فَسَوّىٰكَ فَعَدَلَكَ(7)
٧۔١ یعنی حقیر نطفے سے، جب کہ اس کے پہلے تیرا وجود نہیں تھا۔ ٧۔٢ یعنی تجھے ایک کامل انسان بنا دیا، تو سنتا ہے، دیکھتا ہے اور عقل فہم رکھتا ہے۔(7)
فى أَىِّ صورَةٍ ما شاءَ رَكَّبَكَ(8)
(8)
كَلّا بَل تُكَذِّبونَ بِالدّينِ(9)
(9)
وَإِنَّ عَلَيكُم لَحٰفِظينَ(10)
(10)
كِرامًا كٰتِبينَ(11)
(11)
يَعلَمونَ ما تَفعَلونَ(12)
(12)
إِنَّ الأَبرارَ لَفى نَعيمٍ(13)
(13)
وَإِنَّ الفُجّارَ لَفى جَحيمٍ(14)
(14)
يَصلَونَها يَومَ الدّينِ(15)
١٥۔١ یعنی جس دن جزا و سزا کے دن کا وہ انکار کرتے تھے اسی دن جہنم میں اپنے اعمال کی پاداش میں داخل ہونگے، (15)
وَما هُم عَنها بِغائِبينَ(16)
(16)
وَما أَدرىٰكَ ما يَومُ الدّينِ(17)
(17)
ثُمَّ ما أَدرىٰكَ ما يَومُ الدّينِ(18)
(18)
يَومَ لا تَملِكُ نَفسٌ لِنَفسٍ شَيـًٔا ۖ وَالأَمرُ يَومَئِذٍ لِلَّهِ(19)
١٩۔١ یعنی دنیا میں تو اللہ نے عارضی طور پر، آزمانے کے لئے، انسانوں کو کم و بیش کے کچھ فرق کے ساتھ اختیارات دے رکھے ہیں۔ لیکن قیامت والے دن تمام اختیارات صرف اور صرف اللہ کے پاس ہوں گے۔(19)