An-Nabaa( النبأ)
Original,King Fahad Quran Complex(الأصلي,مجمع الملك فهد القرآن)
show/hide
Abul A'ala Maududi(ابوالاعلی مودودی)
show/hide
بِسمِ اللَّهِ الرَّحمٰنِ الرَّحيمِ عَمَّ يَتَساءَلونَ(1)
یہ لوگ کس چیز کے بارے میں پوچھ گچھ کر رہے ہیں؟(1)
عَنِ النَّبَإِ العَظيمِ(2)
کیا اُس بڑی خبر کے بارے میں(2)
الَّذى هُم فيهِ مُختَلِفونَ(3)
جس کے متعلق یہ مختلف چہ میگوئیاں کرنے میں لگے ہوئے ہیں؟(3)
كَلّا سَيَعلَمونَ(4)
ہرگز نہیں، عنقریب اِنہیں معلوم ہو جائیگا(4)
ثُمَّ كَلّا سَيَعلَمونَ(5)
ہاں، ہرگز نہیں، عنقریب اِنہیں معلوم ہو جائے گا(5)
أَلَم نَجعَلِ الأَرضَ مِهٰدًا(6)
کیا یہ واقعہ نہیں ہے کہ ہم نے زمین کو فرش بنایا(6)
وَالجِبالَ أَوتادًا(7)
اور پہاڑوں کو میخوں کی طرح گاڑ دیا(7)
وَخَلَقنٰكُم أَزوٰجًا(8)
اور تمہیں (مَردوں اور عورتوں کے) جوڑوں کی شکل میں پیدا کیا(8)
وَجَعَلنا نَومَكُم سُباتًا(9)
اور تمہاری نیند کو باعث سکون بنایا(9)
وَجَعَلنَا الَّيلَ لِباسًا(10)
اور رات کو پردہ پوش(10)
وَجَعَلنَا النَّهارَ مَعاشًا(11)
اور دن کو معاش کا وقت بنایا(11)
وَبَنَينا فَوقَكُم سَبعًا شِدادًا(12)
اور تمہارے اوپر سات مضبوط آسمان قائم کیے(12)
وَجَعَلنا سِراجًا وَهّاجًا(13)
اور ایک نہایت روشن اور گرم چراغ پیدا کیا(13)
وَأَنزَلنا مِنَ المُعصِرٰتِ ماءً ثَجّاجًا(14)
اور بادلوں سے لگاتار بارش برسائی(14)
لِنُخرِجَ بِهِ حَبًّا وَنَباتًا(15)
تاکہ اس کے ذریعہ سے غلہ اور سبزی(15)
وَجَنّٰتٍ أَلفافًا(16)
اور گھنے باغ اگائیں؟(16)
إِنَّ يَومَ الفَصلِ كانَ ميقٰتًا(17)
بے شک فیصلے کا دن ایک مقرر وقت ہے(17)
يَومَ يُنفَخُ فِى الصّورِ فَتَأتونَ أَفواجًا(18)
جس روز صور میں پھونک مار دی جائے گی، تم فوج در فوج نکل آؤ گے(18)
وَفُتِحَتِ السَّماءُ فَكانَت أَبوٰبًا(19)
اور آسمان کھول دیا جائے گا حتیٰ کہ وہ دروازے ہی دروازے بن کر رہ جائے گا(19)
وَسُيِّرَتِ الجِبالُ فَكانَت سَرابًا(20)
اور پہاڑ چلائے جائیں گے یہاں تک کہ وہ سراب ہو جائیں گے(20)
إِنَّ جَهَنَّمَ كانَت مِرصادًا(21)
درحقیقت جہنم ایک گھات ہے(21)
لِلطّٰغينَ مَـٔابًا(22)
سرکشوں کا ٹھکانا(22)
لٰبِثينَ فيها أَحقابًا(23)
جس میں وہ مدتوں پڑے رہیں گے(23)
لا يَذوقونَ فيها بَردًا وَلا شَرابًا(24)
اُس کے اندر کسی ٹھنڈک اور پینے کے قابل کسی چیز کا مزہ وہ نہ چکھیں گے(24)
إِلّا حَميمًا وَغَسّاقًا(25)
کچھ ملے گا تو بس گرم پانی اور زخموں کا دھوون(25)
جَزاءً وِفاقًا(26)
(اُن کے کرتوتوں) کا بھرپور بدلہ(26)
إِنَّهُم كانوا لا يَرجونَ حِسابًا(27)
وہ کسی حساب کی توقع نہ رکھتے تھے(27)
وَكَذَّبوا بِـٔايٰتِنا كِذّابًا(28)
اور ہماری آیات کو انہوں نے بالکل جھٹلا دیا تھا(28)
وَكُلَّ شَيءٍ أَحصَينٰهُ كِتٰبًا(29)
اور حال یہ تھا کہ ہم نے ہر چیز گن گن کر لکھ رکھی تھی(29)
فَذوقوا فَلَن نَزيدَكُم إِلّا عَذابًا(30)
اب چکھو مزہ، ہم تمہارے لیے عذاب کے سوا کسی چیز میں ہرگز اضافہ نہ کریں گے(30)
إِنَّ لِلمُتَّقينَ مَفازًا(31)
یقیناً متقیوں کے لیے کامرانی کا ایک مقام ہے(31)
حَدائِقَ وَأَعنٰبًا(32)
باغ اور انگور(32)
وَكَواعِبَ أَترابًا(33)
اور نوخیر ہم سن لڑکیاں(33)
وَكَأسًا دِهاقًا(34)
اور چھلکتے ہوئے جام(34)
لا يَسمَعونَ فيها لَغوًا وَلا كِذّٰبًا(35)
وہاں کوئی لغو اور جھوٹی بات وہ نہ سنیں گے(35)
جَزاءً مِن رَبِّكَ عَطاءً حِسابًا(36)
جزا اور کافی انعام تمہارے رب کی طرف سے(36)
رَبِّ السَّمٰوٰتِ وَالأَرضِ وَما بَينَهُمَا الرَّحمٰنِ ۖ لا يَملِكونَ مِنهُ خِطابًا(37)
اُس نہایت مہربان خدا کی طرف سے جو زمین اور آسمانوں کا اور ان کے درمیان کی ہر چیز کا مالک ہے جس کے سامنے کسی کو بولنے کا یارا نہیں(37)
يَومَ يَقومُ الرّوحُ وَالمَلٰئِكَةُ صَفًّا ۖ لا يَتَكَلَّمونَ إِلّا مَن أَذِنَ لَهُ الرَّحمٰنُ وَقالَ صَوابًا(38)
جس روز روح اور ملائکہ صف بستہ کھڑے ہونگے، کوئی نہ بولے گا سوائے اُس کے جسے رحمٰن اجازت دے اور جو ٹھیک بات کہے(38)
ذٰلِكَ اليَومُ الحَقُّ ۖ فَمَن شاءَ اتَّخَذَ إِلىٰ رَبِّهِ مَـٔابًا(39)
وہ دن برحق ہے، اب جس کا جی چاہے اپنے رب کی طرف پلٹنے کا راستہ اختیار کر لے(39)
إِنّا أَنذَرنٰكُم عَذابًا قَريبًا يَومَ يَنظُرُ المَرءُ ما قَدَّمَت يَداهُ وَيَقولُ الكافِرُ يٰلَيتَنى كُنتُ تُرٰبًا(40)
ہم نے تم لوگوں کو اُس عذاب سے ڈرا دیا ہے جو قریب آ لگا ہے جس روز آدمی وہ سب کچھ دیکھ لے گا جو اس کے ہاتھوں نے آگے بھیجا ہے، اور کافر پکار اٹھے گا کہ کاش میں خاک ہوتا(40)