Al-Ma'arij( المعارج)
Original,King Fahad Quran Complex(الأصلي,مجمع الملك فهد القرآن)
show/hide
Abul A'ala Maududi(ابوالاعلی مودودی)
show/hide
بِسمِ اللَّهِ الرَّحمٰنِ الرَّحيمِ سَأَلَ سائِلٌ بِعَذابٍ واقِعٍ(1)
مانگنے والے نے عذاب مانگا ہے، (وہ عذاب) جو ضرور واقع ہونے والا ہے(1)
لِلكٰفِرينَ لَيسَ لَهُ دافِعٌ(2)
کافروں کے لیے ہے، کوئی اُسے دفع کرنے والا نہیں(2)
مِنَ اللَّهِ ذِى المَعارِجِ(3)
اُس خدا کی طرف سے ہے جو عروج کے زینوں کا مالک ہے(3)
تَعرُجُ المَلٰئِكَةُ وَالرّوحُ إِلَيهِ فى يَومٍ كانَ مِقدارُهُ خَمسينَ أَلفَ سَنَةٍ(4)
ملائکہ اور روح اُس کے حضور چڑھ کر جاتے ہیں ایک ایسے دن میں جس کی مقدار پچاس ہزار سال ہے(4)
فَاصبِر صَبرًا جَميلًا(5)
پس اے نبیؐ، صبر کرو، شائستہ صبر(5)
إِنَّهُم يَرَونَهُ بَعيدًا(6)
یہ لوگ اُسے دور سمجھتے ہیں(6)
وَنَرىٰهُ قَريبًا(7)
اور ہم اسے قریب دیکھ رہے ہیں(7)
يَومَ تَكونُ السَّماءُ كَالمُهلِ(8)
(وہ عذاب اُس روز ہوگا) جس روز آسمان پگھلی ہوئی چاندی کی طرح ہو جائے گا(8)
وَتَكونُ الجِبالُ كَالعِهنِ(9)
اور پہاڑ رنگ برنگ کے دھنکے ہوئے اون جیسے ہو جائیں گے(9)
وَلا يَسـَٔلُ حَميمٌ حَميمًا(10)
اور کوئی جگری دوست اپنے جگری دوست کو نہ پوچھے گا(10)
يُبَصَّرونَهُم ۚ يَوَدُّ المُجرِمُ لَو يَفتَدى مِن عَذابِ يَومِئِذٍ بِبَنيهِ(11)
حالانکہ وہ ایک دوسرے کو دکھائے جائیں گے مجرم چاہے گا کہ اس دن کے عذاب سے بچنے کے لیے اپنی اولاد کو(11)
وَصٰحِبَتِهِ وَأَخيهِ(12)
اپنی بیوی کو، اپنے بھائی کو(12)
وَفَصيلَتِهِ الَّتى تُـٔويهِ(13)
اپنے قریب ترین خاندان کو جو اسے پناہ دینے والا تھا(13)
وَمَن فِى الأَرضِ جَميعًا ثُمَّ يُنجيهِ(14)
اور روئے زمین کے سب لوگوں کو فدیہ میں دیدے اور یہ تدبیر اُسے نجات دلا دے(14)
كَلّا ۖ إِنَّها لَظىٰ(15)
ہرگز نہیں وہ تو بھڑکتی ہوئی آگ کی لپٹ ہوگی(15)
نَزّاعَةً لِلشَّوىٰ(16)
جو گوشت پوست کو چاٹ جائے گی(16)
تَدعوا مَن أَدبَرَ وَتَوَلّىٰ(17)
پکار پکار کر اپنی طرف بلائے گی ہر اُس شخص کو جس نے حق سے منہ موڑا اور پیٹھ پھیری(17)
وَجَمَعَ فَأَوعىٰ(18)
اور مال جمع کیا اور سینت سینت کر رکھا(18)
۞ إِنَّ الإِنسٰنَ خُلِقَ هَلوعًا(19)
انسان تھڑدلا پیدا کیا گیا ہے(19)
إِذا مَسَّهُ الشَّرُّ جَزوعًا(20)
جب اس پر مصیبت آتی ہے تو گھبرا اٹھتا ہے(20)
وَإِذا مَسَّهُ الخَيرُ مَنوعًا(21)
اور جب اسے خوشحالی نصیب ہوتی ہے تو بخل کرنے لگتا ہے(21)
إِلَّا المُصَلّينَ(22)
مگر وہ لوگ (اِس عیب سے بچے ہوئے ہیں) جو نماز پڑھنے والے ہیں(22)
الَّذينَ هُم عَلىٰ صَلاتِهِم دائِمونَ(23)
جو اپنی نماز کی ہمیشہ پابندی کرتے ہیں(23)
وَالَّذينَ فى أَموٰلِهِم حَقٌّ مَعلومٌ(24)
جن کے مالوں میں،(24)
لِلسّائِلِ وَالمَحرومِ(25)
سائل اور محروم کا ایک حق مقرر ہے(25)
وَالَّذينَ يُصَدِّقونَ بِيَومِ الدّينِ(26)
جو روز جزا کو برحق مانتے ہیں(26)
وَالَّذينَ هُم مِن عَذابِ رَبِّهِم مُشفِقونَ(27)
جو اپنے رب کے عذاب سے ڈرتے ہیں(27)
إِنَّ عَذابَ رَبِّهِم غَيرُ مَأمونٍ(28)
کیونکہ اُن کے رب کا عذاب ایسی چیز نہیں ہے جس سے کوئی بے خوف ہو(28)
وَالَّذينَ هُم لِفُروجِهِم حٰفِظونَ(29)
جو اپنی شرمگاہوں کی حفاظت کرتے ہیں(29)
إِلّا عَلىٰ أَزوٰجِهِم أَو ما مَلَكَت أَيمٰنُهُم فَإِنَّهُم غَيرُ مَلومينَ(30)
بجز اپنی بیویوں یا اپنی مملوکہ عورتوں کے جن سے محفوظ نہ رکھنے میں ان پر کوئی ملامت نہیں(30)
فَمَنِ ابتَغىٰ وَراءَ ذٰلِكَ فَأُولٰئِكَ هُمُ العادونَ(31)
البتہ جو اس کے علاوہ کچھ اور چاہیں وہی حد سے تجاوز کرنے والے ہیں(31)
وَالَّذينَ هُم لِأَمٰنٰتِهِم وَعَهدِهِم رٰعونَ(32)
جو اپنی امانتوں کی حفاظت اور اپنے عہد کا پاس کرتے ہیں(32)
وَالَّذينَ هُم بِشَهٰدٰتِهِم قائِمونَ(33)
جو اپنی گواہیوں میں راست بازی پر قائم رہتے ہیں(33)
وَالَّذينَ هُم عَلىٰ صَلاتِهِم يُحافِظونَ(34)
اور جو اپنی نماز کی حفاظت کرتے ہیں(34)
أُولٰئِكَ فى جَنّٰتٍ مُكرَمونَ(35)
یہ لوگ عزت کے ساتھ جنت کے باغوں میں رہیں گے(35)
فَمالِ الَّذينَ كَفَروا قِبَلَكَ مُهطِعينَ(36)
پس اے نبیؐ، کیا بات ہے کہ یہ منکرین دائیں اور بائیں سے،(36)
عَنِ اليَمينِ وَعَنِ الشِّمالِ عِزينَ(37)
گروہ در گروہ تمہاری طرف دوڑے چلے آ رہے ہیں؟(37)
أَيَطمَعُ كُلُّ امرِئٍ مِنهُم أَن يُدخَلَ جَنَّةَ نَعيمٍ(38)
کیا اِن میں سے ہر ایک یہ لالچ رکھتا ہے کہ وہ نعمت بھری جنت میں داخل کر دیا جائے گا؟(38)
كَلّا ۖ إِنّا خَلَقنٰهُم مِمّا يَعلَمونَ(39)
ہرگز نہیں ہم نے جس چیز سے اِن کو پیدا کیا ہے اُسے یہ خود جانتے ہیں(39)
فَلا أُقسِمُ بِرَبِّ المَشٰرِقِ وَالمَغٰرِبِ إِنّا لَقٰدِرونَ(40)
پس نہیں، میں قسم کھاتا ہوں مشرقوں اور مغربوں کے مالک کی، ہم اِس پر قادر ہیں(40)
عَلىٰ أَن نُبَدِّلَ خَيرًا مِنهُم وَما نَحنُ بِمَسبوقينَ(41)
کہ اِن کی جگہ اِن سے بہتر لوگ لے آئیں اور کوئی ہم سے بازی لے جانے والا نہیں ہے(41)
فَذَرهُم يَخوضوا وَيَلعَبوا حَتّىٰ يُلٰقوا يَومَهُمُ الَّذى يوعَدونَ(42)
لہٰذا اِنہیں اپنی بیہودہ باتوں اور اپنے کھیل میں پڑا رہنے دو یہاں تک کہ یہ اپنے اُس دن تک پہنچ جائیں جس کا ان سے وعدہ کیا جا رہا ہے(42)
يَومَ يَخرُجونَ مِنَ الأَجداثِ سِراعًا كَأَنَّهُم إِلىٰ نُصُبٍ يوفِضونَ(43)
جب یہ اپنی قبروں سے نکل کر اِس طرح دوڑے جا رہے ہوں گے جیسے اپنے بتوں کے استھانوں کی طرف دوڑ رہے ہوں(43)
خٰشِعَةً أَبصٰرُهُم تَرهَقُهُم ذِلَّةٌ ۚ ذٰلِكَ اليَومُ الَّذى كانوا يوعَدونَ(44)
اِن کی نگاہیں جھکی ہوئی ہوں گی، ذلت اِن پر چھا رہی ہوگی وہ دن ہے جس کا اِن سے وعدہ کیا جا رہا ہے(44)