Al-Fajr( الفجر)
Original,King Fahad Quran Complex(الأصلي,مجمع الملك فهد القرآن)
show/hide
Abul A'ala Maududi(ابوالاعلی مودودی)
show/hide
بِسمِ اللَّهِ الرَّحمٰنِ الرَّحيمِ وَالفَجرِ(1)
قسم ہے فجر کی(1)
وَلَيالٍ عَشرٍ(2)
اور دس راتوں کی(2)
وَالشَّفعِ وَالوَترِ(3)
اور جفت اور طاق کی(3)
وَالَّيلِ إِذا يَسرِ(4)
اور رات کی جبکہ وہ رخصت ہو رہی ہو(4)
هَل فى ذٰلِكَ قَسَمٌ لِذى حِجرٍ(5)
کیا اِس میں کسی صاحب عقل کے لیے کوئی قسم ہے؟(5)
أَلَم تَرَ كَيفَ فَعَلَ رَبُّكَ بِعادٍ(6)
تم نے دیکھا نہیں کہ تمہارے رب نے کیا برتاؤ کیا(6)
إِرَمَ ذاتِ العِمادِ(7)
اونچے ستونوں والے عاد ارم کے ساتھ(7)
الَّتى لَم يُخلَق مِثلُها فِى البِلٰدِ(8)
جن کے مانند کوئی قوم دنیا کے ملکوں میں پیدا نہیں کی گئی تھی؟(8)
وَثَمودَ الَّذينَ جابُوا الصَّخرَ بِالوادِ(9)
اور ثمود کے ساتھ جنہوں نے وادی میں چٹانیں تراشی تھیں؟(9)
وَفِرعَونَ ذِى الأَوتادِ(10)
اور میخوں والے فرعون کے ساتھ؟(10)
الَّذينَ طَغَوا فِى البِلٰدِ(11)
یہ وہ لوگ تھے جنہوں نے دنیا کے ملکوں میں بڑی سرکشی کی تھی(11)
فَأَكثَروا فيهَا الفَسادَ(12)
اور ان میں بہت فساد پھیلایا تھا(12)
فَصَبَّ عَلَيهِم رَبُّكَ سَوطَ عَذابٍ(13)
آخرکار تمہارے رب نے ان پر عذاب کا کوڑا برسا دیا(13)
إِنَّ رَبَّكَ لَبِالمِرصادِ(14)
حقیقت یہ ہے کہ تمہارا رب گھات لگائے ہوئے ہے(14)
فَأَمَّا الإِنسٰنُ إِذا مَا ابتَلىٰهُ رَبُّهُ فَأَكرَمَهُ وَنَعَّمَهُ فَيَقولُ رَبّى أَكرَمَنِ(15)
مگر انسان کا حال یہ ہے کہ اس کا رب جب اُس کو آزمائش میں ڈالتا ہے اور اُسے عزت اور نعمت دیتا ہے تو وہ کہتا ہے کہ میرے رب نے مجھے عزت دار بنا دیا(15)
وَأَمّا إِذا مَا ابتَلىٰهُ فَقَدَرَ عَلَيهِ رِزقَهُ فَيَقولُ رَبّى أَهٰنَنِ(16)
اور جب وہ اُس کو آزمائش میں ڈالتا ہے اور اُس کا رزق اُس پر تنگ کر دیتا ہے تو وہ کہتا ہے کہ میرے رب نے مجھے ذلیل کر دیا(16)
كَلّا ۖ بَل لا تُكرِمونَ اليَتيمَ(17)
ہرگز نہیں، بلکہ تم یتیم سے عزت کا سلوک نہیں کرتے(17)
وَلا تَحٰضّونَ عَلىٰ طَعامِ المِسكينِ(18)
اور مسکین کو کھانا کھلانے پر ایک دوسرے کو نہیں اکساتے(18)
وَتَأكُلونَ التُّراثَ أَكلًا لَمًّا(19)
اور میراث کا سارا مال سمیٹ کر کھا جاتے ہو(19)
وَتُحِبّونَ المالَ حُبًّا جَمًّا(20)
اور مال کی محبت میں بری طرح گرفتار ہو(20)
كَلّا إِذا دُكَّتِ الأَرضُ دَكًّا دَكًّا(21)
ہرگز نہیں، جب زمین پے در پے کوٹ کوٹ کر ریگ زار بنا دی جائے گی(21)
وَجاءَ رَبُّكَ وَالمَلَكُ صَفًّا صَفًّا(22)
اور تمہارا رب جلوہ فرما ہوگا اِس حال میں کہ فرشتے صف در صف کھڑے ہوں گے(22)
وَجِا۟يءَ يَومَئِذٍ بِجَهَنَّمَ ۚ يَومَئِذٍ يَتَذَكَّرُ الإِنسٰنُ وَأَنّىٰ لَهُ الذِّكرىٰ(23)
اور جہنم اُس روز سامنے لے آئی جائے گی، اُس دن انسان کو سمجھ آئے گی اور اس وقت اُس کے سمجھنے کا کیا حاصل؟(23)
يَقولُ يٰلَيتَنى قَدَّمتُ لِحَياتى(24)
وہ کہے گا کہ کاش میں نے اپنی اِس زندگی کے لیے کچھ پیشگی سامان کیا ہوتا!(24)
فَيَومَئِذٍ لا يُعَذِّبُ عَذابَهُ أَحَدٌ(25)
پھر اُس دن اللہ جو عذاب دے گا ویسا عذاب دینے والا کوئی نہیں(25)
وَلا يوثِقُ وَثاقَهُ أَحَدٌ(26)
اور اللہ جیسا باندھے گا ویسا باندھنے والا کوئی نہیں(26)
يٰأَيَّتُهَا النَّفسُ المُطمَئِنَّةُ(27)
(دوسری طرف ارشاد ہوگا) اے نفس مطمئن!(27)
ارجِعى إِلىٰ رَبِّكِ راضِيَةً مَرضِيَّةً(28)
چل اپنے رب کی طرف، اِس حال میں کہ تو (اپنے انجام نیک سے) خوش (اور اپنے رب کے نزدیک) پسندیدہ ہے(28)
فَادخُلى فى عِبٰدى(29)
شامل ہو جا میرے (نیک) بندوں میں(29)
وَادخُلى جَنَّتى(30)
اور داخل ہو جا میری جنت میں(30)